HomePoetryاسی کے ذکر سے ملتا ہے اب قرار مجھے...


اسی کے ذکر سے ملتا ہے اب قرار مجھے…

تو کوزہ گر ہے اگر چاک سے اتار مجھے
مگر یہ شرط ہے پہلے ذرا سنوار مجھے

گزر گیا ہے جو اک موجۂ ہوا کی طرح
جدا نہ ہوتا نہ کرتا وہ سوگوار مجھے

کھلے شگوفے مگر پھول بھی نہ بن پائے
اداس کرگیا یہ موسمِ بہار مجھے

مثالِ میر بھلایا نہ عمر بھر اس کو
کہ اس کی یاد نے رکھا ہے بےقرار مجھے

وہ ایک شخص جو دل میں سما گیا تھا حسن
اسی کے ذکر سے ملتا ہے اب قرار مجھے

کلام : حسن عسکری کاظمی

RELATED ARTICLES
- Advertisment -