HomePoetryشہر میں جنگ ہے جس شخص کی ہر ایک کے ساتھ ۔۔۔


شہر میں جنگ ہے جس شخص کی ہر ایک کے ساتھ ۔۔۔

سجدہ کرتے ہیں ترے سر پہ کبوتر مرے دوست
میں نے دیکھا ہے یہ منظر تری چھت پر مرے دوست

تو مجھے داد نہ دے پر مرا احوال تو پوچھ
تا کہ تجھ پر بھی کھلے تیرا سخن ور مرے دوست

ہاتھ رکھے گا تو اندھوں  کو دکھائی دے گا
ایسا محبوب ہے میرا وہ قلندر مرے دوست

اسے کہنا کہ ملے وقت تو آنا مرے پاس
دیکھنے کے لئے اس جنگ کا منظر مرے دوست

ہے انھی خانہ بدوشوں میں بسیرا میرا
جس جگہ چھوڑ گیا تھا ترا لشکر مرے دوست

آخری شب ترے خط پھونک دیے تھے میں نے 
درج تھے جن میں  ترے نام سے وافر مرے دوست

اتنی حیرت سے نہ اب دیکھ کہ میں مر جاؤں
پیار سے دیکھ مجھے آج برابر مرے دوست

شہر میں جنگ ہے جس شخص کی ہر ایک کے ساتھ 
وہ بھی تعظیم کرے گا مری اٹھ کر مرے دوست

پرورش کرتے ہیں جو جرم کی تفریق کے ساتھ
آپ جیسے کئی دیکھے ہیں ستمگر مرے دوست

کلام :ندیم ملک

RELATED ARTICLES
- Advertisment -