HomePoetryمجھکو وداع کروکہ وہاں جارہاہوں میں۔۔۔ جس دشتِ بے اماں سے کوئی...


مجھکو وداع کروکہ وہاں جارہاہوں میں۔۔۔ جس دشتِ بے اماں سے کوئی لوٹتا نہیں

اک کربِ لادوا ہےکہ جاں چھوڑتانہیں
اب کے بجز گریز ، کوئی راستہ نہیں

جانے یہ ہجرکونسےمحشرمیں لےچلے
تجھ پر مجھے یقین ہے ، اپنا پتہ نہیں

میں بھی پلٹ رہا ہوں صدائیں دیئے بنا
توبھی یہ فرض کرکہ مجھےجانتانہیں

تجھ کو نوید ہو کہ وہ خود سر چلا گیا
جوتجھ سےکہہ رہاتھاکہ میں مانتانہیں

کمبخت ایک دل ہی توہےٹوٹ جائیگا
کب تیرا اعتبار ہے جو ٹوٹتا نہیں

مجھکو وداع کروکہ وہاں جارہاہوں میں
جس دشتِ بے اماں سے کوئی لوٹتا نہیں

اُبھری غزل کے رُوپ میں اک چیخ آخرش
تجھ کو بڑا گلہ تھا کہ میں بولتا نہیں

کلام : ناصر محمود خالد

RELATED ARTICLES
- Advertisment -